nation-against-pakistan-military-s-involvement-in-yemen-issue-1428271319-4269

مشکل گھڑی میں سعودی عرب کا ساتھ دینا حکومت پر فرض اور قرض ہے‘ حافظ ذاکر الرحمن صدیقی

اسرائیل اور اسکے حواری سعودی عرب میں فرقہ واریت کی آگ بڑھکا کر امن کو سبوتاژ کرنا چاہتے ہیں

مسلمانوں کو سیاسی مصلحت نہیں بلکہ سعودی عرب کی سلامتی عزیز ہے۔ حرمین شریفین کی حرمت پر دنیا بھر کے مسلمان کٹ مرنے کو تیار ہیں

اہل حدیث یوتھ فورس پاکستان کے زیر اہتمام 3 اپریل کو ملک بھر میں یوم تحفظ حرمین شریفین منایا گیا۔

سعودی عرب نے ہر میدان میں پاکستان کا ساتھ دیا۔ اس مشکل گھڑی میں سعودی عرب کا ساتھ دینا حکومت پر فرض اور قرض ہے۔ یمن کی صورتحال کے پیچھے دشمنان حرمین شریفین کی منظم سازش ہے۔ حرمین شریفین مسلمانوں کا مرکز ومحور ہے۔ اس کی طرف ہر اٹھنے والے ہاتھ کو کاٹ دیا جائے گا اور ناپاک عزائم کو خاک میں ملا دیں گے۔ ان خیالات کا اظہار اہل حدیث یوتھ فورس پاکستان کے صدر حافظ ذاکر الرحمن صدیقی‘ مرکزی جنرل سیکرٹری حافظ فیصل افضل شیخ‘ حافظ عمران تبسم نے مرکز 106 راوی روڈ میں سعودی عرب کی صورتحال پر ہنگامی میٹنگ میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیل اور اس کے حواری سعودی عرب میں فرقہ واریت کی آگ بڑھکا کر سعودی امن کو سبوتاژ کرنے کے ارادہ میں ہیں اور باغیوں کی پشت پناہی کر رہے ہیں۔ جو لوگ سعودی عرب کے خلاف غلیظ پروپیگنڈا کر رہے ہیںوہ اپنے مذموم مقاصد سے باز آجائیں ورنہ پوری دنیا میں ان کے گرد گھیرا تنگ کر دیا جائے گا۔ بعض پاکستانی حکمران بھی تحفظ حرمین شریفین کے حوالے سے مشکوک کردار ادا کر رہے ہیں جو قابل افسوس ہے۔ مصلحت کا شکار رہنما تعصب کی عینک اتار کر سرزمین حرمین شریفین کا تحفظ اپنا دینی فریضہ سمجھ کر ادا کریں۔ مسلمانوں کو سیاسی مصلحت نہیں بلکہ سعودی عرب کی سلامتی عزیز ہے۔ حرمین شریفین کی حرمت پر دنیا بھر کے مسلمان کٹ مرنے کو تیار ہیں۔ پروفیسر ساجد میر حفظہ اللہ کے حکم پر اہل حدیث یوتھ فورس پاکستان نے سعودی عرب کے باغیوں کے خلاف فضائی آپریشن کی کھل کر حمایت اور ہر قسم کے تعاون کا اعلان کیا ہے۔ اس سلسلہ میں اہل حدیث یوتھ فورس پاکستان کے زیر اہتمام 3 اپریل کو ملک بھر میں یوم تحفظ حرمین شریفین منایا گیا۔اس حوالے سے سعودی عرب سے اظہار یکجہتی کے لیے ملک کے مختلف شہروں میں ریلیاں‘ جلسے اور کانفرنسز منعقد کیے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

You may use these HTML tags and attributes: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <strike> <strong>